Khawab Main Pul Siraat Dekhna

Rate this post

Khawab Main Pul Siraat Dekhna

خواب میں پل صراط دیکھنا

Khawab Main Pul Siraat Dekhna Find Dream meaning of Khawab Main Pul Siraat Dekhna and other dreams in Urdu. Dream Interpretation & Meaning in Urdu. Read answers by islamic scholars and Muslim mufti. Answers taken by Hadees Sharif as well. Read Khawab Main Pul Siraat Dekhna meaning according to Khwab Nama and Islamic Dreams Dictionary.

صراط، رستہ ، پل صراط ، حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ تعالی علیہ نے فرمایا ہے ۔ اگر کوئی میں دیکھے کہ رستے پر کھڑا ہے ۔ دلیل ہے کہ خراب کام اس کے ہاتھ پر درست ہو ں گا۔ کیونکہ صراط سیدھا راستہ ہے ۔ فرمان حق تعالیٰ ہے ۔ یھیک صراطا مستقیماً(اور تجھ کو سیدھا راستہ دکھائے گا۔
) اور اگر دیکھے کہ پل صراط پر سے گزر گیا ہے ۔ دلیل ہے کہ بڑی مصیبت اور موت سے امن میں ہو گا۔ اور اگر دیکھے کہ پل صراط پر سے دوزخ میں گرا ہے ۔ دلیل ہے کہ رنج و بلا اور مصیبت میں گھرے گا حضرت ابراہیم کرمانی رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا ہے ۔
اگر دیکھے کہ پل صراط پر سے گزرا ہے دلیل ہے کہ رہ آخرت اورنیک عمل کرے گا۔ حضرت جعفر صادق علیہ السلام نے فرمایا ہے ۔ کہ میں پل صراط دیکھنا چھ وجہ پر ہے ۔ (۱) راہ راست(۲) مشکل کام (۳)خوف (۴)بادشاہ کی طرف سے آرام (۵)گناہ (۶)نفاق

Khawab Main Pul Siraat Dekhna The Prophet (peace and blessings of Allaah be upon him) said: If anyone sees that on the road. It is argued that the bad work will be right on his hand. Because the straight path is straight. The decree is right. This is a straight path (and will show you a straight path.
) And if you see that the bridge has crossed the border. It is argued that peace will be a great peace and death. And if you see that the bridge has dropped from the ground to hell. It is argued that the Prophet (peace and blessings of Allaah be upon him) said:
If you see that the bridge has gone through the truth, it is argued that it will be in the Hereafter and will act. Hazrat Jafar Sadiq said. That’s about six reasons to see the bridge. (1) Way Way (2) Hard Work (3) Fear (4) Comfort by King (5) Sin (6) Gospel

Recent Posts:

[display-posts]

اچھا خواب نعمتِ خدا وندی

حضورﷺ نے ارشاد فرمایا ” بشارتوں کے سوا کوئی چیز باقی نہیں رہی ۔ صحابہ نے عرض کیا ےیا رسولاللہ بشارتوں سے کیا مراد ہے آپ نے فرمایا سچا خواب ۔(صحیح بخاری عن ابی ھریرہ) بخاری ومسلم کی متفق علیہ حدیث ہے آنحضرت ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ سچا خواب نبوت کا چھیاسواں حصہ ہے ۔

اس حدیث شریف معلوم ہوا کہ سچا خواب رویائے صالحہ علوم نبوت کا ایک جزو ہے اور علم نبوت باقی ہے گو انبیاءکرام کی آمد کا سلسلہ موقوف ہوچکا دوسرے لفظوں میں سچا خواب علوم نبوی کا عکس ہے۔

خواب کی اقسا م

امام محمد بن سیرین ارشاد فرماتے ہیں کہ خواب تین قسم کے ہوتے ہیں ۔

  • 1- مبشرات خداوندی –

2- تخویفِ شیطان) شیطان کے زیرِ اثر ) –

3- حدیثِ نفس یعنی ذہنی اور دماغی خیلات کا عکس –

اس تقسیم سے ظاہر ہوتا ہے کہ خواب کے تمام اقسام صحیح قابلِ تعبیر اوردر خوراعتناء نہیں ہوتے تعبیر اور اعتبار کے لائق وہی خواب ہوتے ہیں جو حق تعالیٰ کی طرف سے بشارت اور اعلام پر مبنی ہوں۔

علم تعبیر کے چھ مشہور امام

-علم تعبیر میں درج ذیل چھ آئمہ کرام کے اقوال کے بطور سند پیش کیا جاتا ہے

  1. حضرت دانیال علیہ اسلام
  2. حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ تعالیٰ علیہ
  3. حضرت امام محمد بن سرین رحمتہ اللہ علیہ
  4. حضرت امام جابر مغربی رضی اللہ تعالیٰ علیہ
  5. حضرت امام ابراہیم کرمانی علیہ رحمتہ اللہ علیہ
  6. حضرت امام اسمعیل بن شوکت رحمتہ اللہ علیہ

تعبیر بیان کرنے کیلئے ضروری علوم

  1. ۔علم تفسیر
  2. علم ضرب الامثال
  3. علم حدیث
  4. اشعار عرب
  5. علم اشتقاق (صرف)
  6. نوادر
  7. علم الغات
  8. علم الفاظ متد اَولہ

چنانچہ ایسے علماء ہے تعبیر بیان کرنے کے اہل ہیں جو ان علوم کے ماہر اور متقی پرہیزگار ہوں ۔

Leave a Comment